کیا آپ جانتے ہیں پاکستان کے سب سے اہم ادارے پاک فوج کے سپاہ سالار کون تھے اور کون ہیں ؟

اگر ہم نظم و ضبط کی بات کریں تو پاکستان کا منظم ترین ادارہ پاک فوج ہے پاکستانی قوم افواج پاکستان سے بہت محبّت بلکہ عقیدت رکھتی ہے آج اس مضمون میں ہم آپ کو سے آج تک کے افواج پاکستان کے سپاہ سالاروں کا تعارف کروائیں گے

(1947-1948) جنرل فرینک والٹر مسیوی

فرینک والٹر1893 کو برطانیہ میں پیدا ہوئے 1913 میں برطانوی فوج کمیشن حاصل کیا اور بعد ازاں تقسیم پاک و ہند کے بعد 15 اگست 1947 کو پاکستان کے پہلے آرمی چیف تعینات ہوئے اور 10 فروری 1948 کو اپنے عہدے سے ریٹائرڈ ہوئے

1

2

(1948-1951) جنرل ڈگلس ڈیوڈ گریسی

جنرل گریسی ٣ ستمبر 1894 کو برطانیہ میں پیدا ہوئے انہوں نے برٹش فوج میں کمیشن حاصل کیا پہلی اور دوسری جنگ عظیم میں حصّہ لیا اور 10 فروری 1948 کو پاکستان کے دوسرے آرمی چیف بنے اور 16 جنوری 1951 کو اپنے عہدے سے سبکدوش ہوئے



3

(1951-1958) فیلڈ مارشل محمّد ایوب خان

ایوب خان 14 مئی 1907 کو پیدا ہوئے 1922 میں رائل ملٹری اکیڈمی میں سیلکٹ ہوئے 1928 میں کمیشن حاصل کیا 17 جنوری 1951 کو پاکستان کے تیسرے آرمی چیف بنے اور 1958 کو اپنے عہدے سے ریٹائرڈ ہوئے

4

(1958-1966) جنرل محمّد موسیٰ خان

محمّد موسیٰ 20 نومبر 1908 میں پیدا ہوئے 1935 کو برطانوی فوج میں کمیشن حاصل کیا اور بعد ازاں 1958 سے 1966 تک پاکستان کے آرمی چیف رہے

5

(1966-1971) جنرل آغا محمّد یحییٰ خان

یحییٰ خان 4 فروری 1917 کو پیدا ہوئے 15 جولائی 1939 کو برطانوی فوج میں کمیشن حاصل کیا 18     ستمبر 1966 کو پاکستان کے آرمی چیف تعینات ہوئے اور 20 دسمبر 1971 کو سقوط ڈھاکہ کے بعد اپنے عہدے سے سبکدوش ہوئے

6

(1971-1972) جنرل گل حسن خان

گل حسن 9 جون 1921 کو پیدا ہوئے 22 فروری 1942 کو برطانوی فوج میں کمیشن حاصل کیا اور بعد ازاں 20 دسمبر 1971 کو پاکستان کے آرمی چیف تعینات ہوئے اور 3 مارچ 1972 کو ریٹائرڈ ہوگئے



7

(1972-1976) جنرل ٹکا خان

ٹکا خان 7 جولائی 1915 میں پیدا ہوئے انہوں نے برطانوی ملٹری اکیڈمی سے گریجویشن کیا اور 22  دسمبر 1940 میں برطانوی فوج میں شمولیت اختیار کی اور بعد ازاں ترقی کرتے ہوئے 3 مارچ 1972 سے 1 مارچ 1976 تک پاکستان کے آرمی چیف رہے

8

(1976-1988) جنرل ضیاء الحق

ضیاء الحق 12 ستمبر 1924 کو بھارت کے شہر جالندھر میں پیدا ہوئے 12 مئی 1943 میں برطانوی فوج میں کمیشن حاصل کیا تقسیم پاکستان کے وقت انہوں نے پاکستان آرمی میں بطور میجر شمولیت اختیار کی اور بعد     ازاں 1 مارچ 1976 میں پاکستان کے آرمی چیف تعینات ہوئے اور پھر 17 اگست 1988 میں شہید کر دیے گئے

9

(1988-1991) جنرل مرزا اسلم بیگ

مرزا اسلم بیگ 2 اگست 1931 کو بھارت کے شہراعظم گڑھ میں پیدا ہوئے اور 23 اگست 1952 کو پاکستان آرمی میں کمیشن حاصل کیا 17 اگست 1988 کو پاکستان کے آرمی چیف بنے اور 16 اگست 1991 میں ریٹائرڈ ہوئے



10

(1991-1993) جنرل آصف نواز جنجوعہ

آصف نواز جنجوعہ 3 جنوری 1937 میں پیدا ہوئے 31 مارچ 1957 میں پاک فوج میں کمیشن حاصل کیا 16  اگست 1991 سے  8جنوری 1993 تک پاکستان کے آرمی چیف رہے

11

(1993-1996) جنرل عبدالوحید کاکڑ

عبدالوحید کاکڑ 20 مارچ 1937 کو پیدا ہوئے 18 اکتوبر 1959 کو پاک آرمی میں کمیشن حاصل کیا 12 جنوری 1993 سے 12 جنوری 1996 تک پاکستان کے آرمی چیف رہے

 

12

(1996-1998) جنرل جہانگیر کرامت

جہانگیر کرامت نے 14 اکتوبر 1959 کو پاک فوج میں کمیشن حاصل کیا 12 جنوری 1996 سے 8 اکتوبر 1998 تک پاکستان کے آرمی چیف بنے

13

(1998-2007) جنرل پرویز مشرف

پرویز مشرف 11 اگست 1943 کو بھارت کے شہر دہلی میں پیدا ہوئے 19 اپریل 1974 کو پاکستان ملٹری اکیڈمی کاکول سے کمیشن حاصل کیا ترقی کے منازل طے کرتے ہوئے 1998 میں پاکستان کے آرمی چیف بنے اور 2007 میں اپنے عہدے سے ریٹائرڈ ہوئے

14

(2007-2013) جنرل اشفاق پرویز کیانی

اشفاق پرویز کیانی نے 1971 میں پاکستان ملٹری اکیڈمی سے کمیشن حاصل کیا اور بعد ازاں 29 نومبر 2007 سے 29 نومبر 2013 تک پاکستان کے آرمی چیف رہے



15

(2013-2016) جنرل راحیل شریف

راحیل شریف کا تعلق ایک فوجی گھرانے سے ہے ان کے مامو میجر عزیز بھٹی 1965 کی جنگ میں شہید ہوئے اور انہیں نشان حیدر سے نوازا گیا اور 1971 کی جنگ میں نشان حیدر کا اعزاز پانے والے میجر شبیر شریف شہید انکے بڑے بھائی  تھے راحیل شریف 16 جون 1956 کو کوئٹہ میں پیدا ہوئے اکتوبر 1976 میں انہوں نے پاک فوج میں شمولیت اختیار کی 29 نومبر 2013 میں پاکستان کے آرمی چیف بنے اور 29 نومبر 2016 میں اپنے عہدے سے ریٹائرڈ ہوئے



16

(2016-Present) جنرل قمر جاوید باجوہ

قمر جاوید باجوہ نے 24 اکتوبر 1980 کو پاک فوج میں کمیشن حاصل کیا اور 16 بلوچ رجمنٹ میں تعینات ہوئے اور ترقی کی منزلیں طے کرتے ہوئے 29 نومبر کو جنرل راحیل شریف سے قلمدان حاصل کیا اور یوں وہ اب تک کے پاکستان کے 16 ویں سپاہ سالار کی حیثیت سے اپنے فرائض سر انجام دے رہے ہیں